ایک اور اوّل

حال ہی میں متحدہ عرب امارات میں 2013ء کے دوران ہونے والے ٹریفک حادثات کے اعداد و شمار شائع ہوئے ہیں ۔ اس سال بھی اُنہی 5 ممالک کے باشندے سب سے زیادہ حادثات کا باعث بنے جو سال 2012ء میں حادثات کا سبب بنے تھے

سال 2013ء میں کُل 1567 حادثات ہوئے جن میں سے 1128 کا سبب انہی 5 ممالک کے باشندے بنے

کُل 160 اموات ہوئیں جن میں سے 101 اموات کے ذمہ دار انہی 5 ممالک کے باشندے ہیں

کُل 2344 لوگ زخمی ہوئے جن میں 1702 لوگوں کے زخمی ہونے کے ذمہ دار انہی 5 ممالک کے باشندے ہیں

۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ پاکستانی ۔ ۔ ۔ ۔ بھارتی ۔ ۔ ۔ اماراتی (مقامی) ۔ ۔ ۔ ۔ بنگلادیشی ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ مصری

حادثات ۔ ۔ 373 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 314 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 298 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 78 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 65

اموات ۔ ۔ ۔ 33 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 28 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 30 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 5 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 5

زخمی ۔ ۔ ۔ 577 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 432 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 467 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 111 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 115

This entry was posted in روز و شب, طور طريقہ, معلومات on by .

About افتخار اجمل بھوپال

رہائش ۔ اسلام آباد ۔ پاکستان ۔ ۔ ۔ ریاست جموں کشمیر کے شہر جموں میں پیدا ہوا ۔ پاکستان بننے کے بعد ہجرت پر مجبور کئے گئے تو پاکستان آئے ۔انجنئرنگ کالج لاہور سے بی ایس سی انجنئرنگ پاس کی اور روزی کمانے میں لگ گیا۔ ملازمت کے دوران اللہ نے قومی اہمیت کے کئی منصوبے میرے ہاتھوں تکمیل کو پہنچائے اور کئی ملکوں کی سیر کرائی جہاں کے باشندوں کی عادات کے مطالعہ کا موقع ملا۔ روابط میں "میں جموں کشمیر میں" پر کلِک کر کے پڑھئے میرے اور ریاست جموں کشمیر کے متعلق حقائق جو پہلے آپ کے علم میں شائد ہی آئے ہوں گے ۔ ۔ ۔ دلچسپیاں ۔ مطالعہ ۔ مضمون نویسی ۔ خدمتِ انسانیت ۔ ویب گردی ۔ ۔ ۔ پسندیدہ کُتب ۔ بانگ درا ۔ ضرب کلِیم ۔ بال جبریل ۔ گلستان سعدی ۔ تاریخی کُتب ۔ دینی کتب ۔ سائنسی ریسرچ کی تحریریں ۔ مُہمْات کا حال

7 thoughts on “ایک اور اوّل

  1. Sarwat AJ

    اللہ ہدایت دے
    ایک جاننے والی ہیں اُن کی ایک بات ایسی کھری لگی کہ کئی بار ذہن میں آتی ہے
    کہتی ہیں : اس قوم کا ہر فرد جلدی میں ہے، کہیں جانا ہو، ٹریفک میں، گھروں میں، بازار میں، ہر شخص بھاگ رہا ہے، لیکن قوم پھر بھی دنیا سے پیچھے ہے

  2. افتخار اجمل بھوپال Post author

    ثروت عبدالجبار صاحبہ
    مجھے تو یوں لگتا ہے کہ میرے ہموطنوں کی اکثریت احساسِ ذمہ داری کھو چکی ہے ۔ علامہ صاحب نے بہت پہلے کہہ دیا تھا
    وائے نادانی متاعِ کارواں جاتا رہا
    کارواں کے دل سے احساسِ زیاں جاتا رہا

  3. Sarwat AJ

    یہ سب غلامی کے آفٹر ایفیکٹ ہیں ۔ پہلے آئینی غلامی تھی اور اب ذہنی غلامی ہے جس سے نکلنا زیادہ مشکل ہے –
    cultural imperialism

  4. Sarwat AJ

    حقیقت کا ادراک کہیں گے
    ڈائگنوز کئے بغیر ؑعلاج ممکن نہیں ہوگا
    اور یہ بات علامہ اقبال بہت پہلے واضح کر گئے ہیں۔

  5. کوثر بیگ

    حادثات توحادثات یہ کبھی جلدی میں تو کبھی سفر کی تکان سے اور کبھی خود میں اعتماد کی کمی اور کبھی اعتماد کی زیادتی سے بھی ہوتے ہیں کوئی غفلت سے سمجھتے ہیں۔میں سمجھتی ہوں قسمت کا لکھا ہوتا ہےبس
    جب حادثات کا حساب لگایا جارہا ہے تو سفر کرنے والوں کا بھی حساب لگایا جارہا ہے کیا؟

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

:wink: :twisted: :roll: :oops: :mrgreen: :lol: :idea: :evil: :cry: :arrow: :?: :-| :-x :-o :-P :-D :-? :) :( :!: 8-O 8)