مدد چاہیئے ایک باریک بین کی

ایک تیز نظر ۔ تیز دماغ اور فوٹو شاپ قسم کی سافٹ ویئر کے ماہر کی ضرورت ہے جو مندرجہ ذیل تصاویر کا مطالعہ / معائنہ کر کے بتائے کہ کونسی تصویر اصلی ہے اور اس کے ساتھ کوئی چھڑ خانی نہیں کی گئی

مندرجہ ذیل تصاویر کی تصحیح مقصود ہے جو کسی صاحب نے مجھے شاید فیس بُک سے نقل کر کے بھیجی ہیں
پہلی تصویر اسلحہ بردار سکندر کی ہے
دوسری تصویر میں صدر آصف علی زرداری اور سکندر دکھائے گئے ہیں
تیسری تصویر میں بلاول زرداری اور سکندر دکھائے گئے ہیں
چوتھی تصویر میں فردوس عاشق عوان کے ایک طرف سکندر کی بیوی کنول اور دوسری طرف زمرد خان دکھائے گئے ہیں
Sikandar1

Sikandar2

Sikandar3

Sikandar4

This entry was posted in سائنس, معائنہ کار, معاشرہ on by .

About افتخار اجمل بھوپال

رہائش ۔ اسلام آباد ۔ پاکستان ۔ ۔ ۔ ریاست جموں کشمیر کے شہر جموں میں پیدا ہوا ۔ پاکستان بننے کے بعد ہجرت پر مجبور کئے گئے تو پاکستان آئے ۔انجنئرنگ کالج لاہور سے بی ایس سی انجنئرنگ پاس کی اور روزی کمانے میں لگ گیا۔ ملازمت کے دوران اللہ نے قومی اہمیت کے کئی منصوبے میرے ہاتھوں تکمیل کو پہنچائے اور کئی ملکوں کی سیر کرائی جہاں کے باشندوں کی عادات کے مطالعہ کا موقع ملا۔ روابط میں "میں جموں کشمیر میں" پر کلِک کر کے پڑھئے میرے اور ریاست جموں کشمیر کے متعلق حقائق جو پہلے آپ کے علم میں شائد ہی آئے ہوں گے ۔ ۔ ۔ دلچسپیاں ۔ مطالعہ ۔ مضمون نویسی ۔ خدمتِ انسانیت ۔ ویب گردی ۔ ۔ ۔ پسندیدہ کُتب ۔ بانگ درا ۔ ضرب کلِیم ۔ بال جبریل ۔ گلستان سعدی ۔ تاریخی کُتب ۔ دینی کتب ۔ سائنسی ریسرچ کی تحریریں ۔ مُہمْات کا حال

6 thoughts on “مدد چاہیئے ایک باریک بین کی

  1. محمد سلیم

    سر، انترنیٹ کے رسیا لوگ بھی کمال کرتے ہیں۔ جھوٹ کو بغیر تصدیق کے آگے ثواب سمجھ کر پھیلاتے ہیں۔
    بلکہ کچھ اس طرح سے ترغیب دیتے ہیں کہ سامنے والا ان کے جھوٹ کو سچ مان لے۔
    کہیں گے اس خبر کو جنگل میں لگی آگ کی طرح پھیلا دو اور پھر عجیب بات کہ لوگ واقعی چواب سمجھ کر ایسا کرنے لگ بھی جائیں گے۔
    کسی ویڈیو کے بارے میں لکھیں گے کہ اس ویڈیو کو باربار ڈیلیٹ کیا جارہا ہے آپ جلدی سے دیکھ لیں۔
    کسی بیمار بچے کی تصویر لگا کر کہیں گے اسے لائک کرو تو فلاں ادارہ آپ کے اس ایک لائک کے بدلے میں اس بچے کو ایک ڈالر دے گا وغیرہ وغیرہ۔
    سکندر ایک اوسط درجے کا پاکستانی چہرہ ہے تو اس کی بیوی برقعے میں ویسی ہی، دونوں کسی سے بھی بآسانی مماثلت کھا جائیں گے تاہم دونوں کے چہرے پر سخت زندگی کے آثار اپنی جگہ ہیں جبکہ فردوس عاشق اعوان والی تصویر میں دکھائی دینے والی عورت کے چہرے پر راحت بھری زندگی نمایاں ہے۔

  2. محمدصابر

    نیچے والی تصویر میں دکھائی گئی خاتون سعودی سفیرکی بیگم ہیں۔ اُوپر والی تصویریں بھی صرف مماثلت ہی رکھتی ہیں۔ سکندر کی نہیں ہیں
    یہ دو لنک دیکھ لیں
    https://fbcdn-sphotos-e-a.akamaihd.net/hphotos-ak-ash4/1003376_540676996003451_1928816491_n.jpg
    http://photos.jang.com.pk/u_image_detail.asp?catId=2&date=4%2F13%2F2012&albumId=0&page=2&picId=44473

  3. عامر ملک

    انٹرنیٹ ایک ایسی دنیا ہوگئی جہاں سچ اور جھوٹ کا پتہ چلانا آسان کام نہیں رہا۔
    صابر صاحب نے جو لنک فراہم کیے ہیں اُن سے حقیقت سامنے آجاتی ہے۔
    ہاں البتہ چوہدری نثار کا جو بیان ہے آض کے اخبار میں وہ اسے بین الاقوامی مافیا، انٹیلیجنس اداروں کا ڈیزائن کیا گیا ڈرامہ قرار دیتے ہیں مزید کہتے ہیں کہ یہ معاملہ اتنا سادہ نہیں ہے جتنا دِکھ رہا ہے۔
    اب پتہ نہیں بین الاقوامی مافیا سے مراد ذرداری ہے یا نہیں۔
    http://www.express.com.pk/epaper/PoPupwindow.aspx?newsID=1101936255&Issue=NP_LHE&Date=20130820

  4. افتخار اجمل بھوپال Post author

    محمد سلیم صاحب
    سکول و کالج اور جوانی میں بڑے بیٹے کے کیمرہ سنبھالنے کے قابل ہونے تک میں اماچئر فوٹو گرافر رہا ہوں ۔ انجنیئرنگ کالج میں میں میں ڈویلوپنگ انلارجنگ پرنٹنگ خود ہی کیا کرتا تھا ۔ ایک جرمن میرا قلمی دوست بن گیا تھا ۔ ایک بار لکھا ”تمہاری فوٹو گرافی کا معیار کیا ہے ؟“ میں نے لکھا اپنا ایک نگیٹو بھیج دو پھر دیکھو ۔ میں نے ایک تصویر بنائی جس میں وہ میرے ساتھ ہمارے ہوسٹل میں کھڑا تھا اور اسے بھیج دی ۔ وہ ششدر رہ گیا تھا ۔ چار پانچ سال قبل تک میں فوٹو شاپ کے ذریعے لوگوں کے حُلیئے بدلاتا رہا ۔ اسی لئے دوسروں سے پوچھا تھا کہ کوئی ایسی تصویر ہے جو شک سے بالاتر ہو ؟

  5. افتخار اجمل بھوپال Post author

    محمد صابر صاحب
    میں آپ کے مہیاء کردہ روابط دیکھ چکا تھا ۔ اسی لئے قارئین سے پوچھا تھا کہ تصاویر میں کوئی ہے جس سے چھڑخانی نہ کی گئی ہو ؟
    مجھے لوگ خطرنا وائرس کی ای میل بھیجتے ہیں تو میں فوری طور پر اس کی اصلیت تلاش کر کے جس نے بھیجی ہوتی ہے اسے بھیج دیتا ہوں ۔ سوشل میڈیا بنانے والے نے تو انسان کی بہتری کا سوچا ہو گا مگر ابلیس ہر جگہ حاوی ہے

  6. افتخار اجمل بھوپال Post author

    عامر ملک صاحب
    چوہدری نثار علی کے بیان کا مشاہدہ میں نے براہِ راست ٹی وی پر کیا تھا ۔ اُس نے سب کچھ بتانے سے گریز کیا اور وعدہ کیا کہ حقائق سامنے آنے پر اسمبلی میں پیش کئے جائیں گے ۔ اب تک کی بات صرف پارلیمانی پارٹیوں کے سربراہاں کو مطالبہ پر بتانے کی بھی بات کی تھی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

:wink: :twisted: :roll: :oops: :mrgreen: :lol: :idea: :evil: :cry: :arrow: :?: :-| :-x :-o :-P :-D :-? :) :( :!: 8-O 8)