چھوٹی چھوٹی باتیں ۔ راستہ اور منزل

2,696 بار دیکھا گیا

My Id Pak

اگر راستہ خوبصورت ہے تو معلوم کیجئے کہ کس منزل کو جاتا ہے
اگر منزل خوبصورت ہو تو راستہ کی پرواہ مت کیجئے

کیونکہ خوبصورت منزل مل جانے پر راستہ کی دُشواریوں کا احساس ختم ہو جاتا ہے
لیکن منزل خوبصورت نہ ہو تو آدمی کے پاس سوائے پچھتاوے کے کچھ نہیں رہ جاتا

آج سے 20 دن بعد مُلک میں انتخابات ہوں گے ۔ اگر میرے ہموطن خوبصورت منزل کو بھُول کر سیاستدانوں کے خوبصورت وعدوں کے پیچھے لگ گئے تو اگلے 5 سال روتے ہوئے ہی گذاریں گے

نہ فرشتے اُمیدوار ہیں اور نہ نبی ۔ اسلئے اُن کی تلاش چھوڑ دیجئے
ووٹ ضرور ڈالیئے مگر اُسے جو باقی سب سے اچھا ہو ۔ باتوں یا شکل میں نہیں ۔ عمل میں اچھا

This entry was posted in پيغام, سبق, طور طريقہ, معاشرہ on by .

About افتخار اجمل بھوپال

رہائش ۔ اسلام آباد ۔ پاکستان ۔ ۔ ۔ ریاست جموں کشمیر کے شہر جموں میں پیدا ہوا ۔ پاکستان بننے کے بعد ہجرت پر مجبور کئے گئے تو پاکستان آئے ۔انجنئرنگ کالج لاہور سے بی ایس سی انجنئرنگ پاس کی اور روزی کمانے میں لگ گیا۔ ملازمت کے دوران اللہ نے قومی اہمیت کے کئی منصوبے میرے ہاتھوں تکمیل کو پہنچائے اور کئی ملکوں کی سیر کرائی جہاں کے باشندوں کی عادات کے مطالعہ کا موقع ملا۔ روابط میں "میں جموں کشمیر میں" پر کلِک کر کے پڑھئے میرے اور ریاست جموں کشمیر کے متعلق حقائق جو پہلے آپ کے علم میں شائد ہی آئے ہوں گے ۔ ۔ ۔ دلچسپیاں ۔ مطالعہ ۔ مضمون نویسی ۔ خدمتِ انسانیت ۔ ویب گردی ۔ ۔ ۔ پسندیدہ کُتب ۔ بانگ درا ۔ ضرب کلِیم ۔ بال جبریل ۔ گلستان سعدی ۔ تاریخی کُتب ۔ دینی کتب ۔ سائنسی ریسرچ کی تحریریں ۔ مُہمْات کا حال

6 thoughts on “چھوٹی چھوٹی باتیں ۔ راستہ اور منزل

  1. افتخار اجمل بھوپال Post author

    شازل صاحب
    آپ میری بات درست سمجھے ۔ اگر عوام اچھے آدمی کو کامیاب کرانا شروع کر دیں گے تو کوئی نا کوئی سیاسی جماعت اس منزل کو اپنا لے گی ۔ اسی میں قوم و ملک کی بہتری ہے ورنہ خوار تو ہو ہی رہے ہیں

  2. kauserbaig

    اگر راستہ خوبصورت ہے تو معلوم کیجئے کہ کس منزل کو جاتا ہے
    اگر منزل خوبصورت ہو تو راستہ کی پرواہ مت کیجئے

    کیونکہ خوبصورت منزل مل جانے پر راستہ کی دُشواریوں کا احساس ختم ہو جاتا ہے
    لیکن منزل خوبصورت نہ ہو تو آدمی کے پاس سوائے پچھتاوے کے کچھ نہیں رہ جاتا

    بہت خوبصورت رائے دی آپ نے ۔۔۔

  3. نعیم خان

    منزل کی تلاش میں ہم وطن لگے ہوئے ہیں مگر کوئی لیڈر نہیں، کوئی قائد نہیں۔ بہت سوں سے اُمیدیں وابستہ ہیں۔ اللہ اپنا کرم کرے اور ہم کو ایک ایسا لیڈر عنایت فرمائے جو وطن کی نیا کو پار لگا سکے۔

  4. افتخار اجمل بھوپال Post author

    نعیم خان صاحب
    خوش آمدَید ۔ اگر اپنے علاقے کے اُمیدواروں میں سے جو سب سے زیادہ سچا باکردار اور خدمت کے جذبے والا ہو اُسے چُنا جائے تو تو ایسے لوگ مل کر ایک اپنے جیسا لیڈر بنا لیں گے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

:wink: :twisted: :roll: :oops: :mrgreen: :lol: :idea: :evil: :cry: :arrow: :?: :-| :-x :-o :-P :-D :-? :) :( :!: 8-O 8)