علامہ اقبال

علامہ اقبال کا یومِ پیدائش مناتے ہوئے آج پورے مُلک میں چھٹی کے مزے لئے گئے ۔ کوئی ہے جس نے سوچا ہو کہ جو مشعل علامہ اقبال دکھا گئے تھے اُس پر عمل کیا جائے ۔ ملاحظہ ہو چند ارشادات

عمل سے زندگی بنتی ہے جنت بھی جہنم بھی ۔ ۔ ۔ یہ خاکی اپنی فطرت میں نہ نوری ہے نہ ناری ہے

ڈھونڈنے والا ستاروں کی گذر گاہ کا ۔۔۔۔۔ اپنے افکار کی دنیا میں سفر کر نہ سکا
اپنی حکمت کے خم و پیچ میں الجھا ایسا ۔۔۔۔۔ آج تک فیصلہ نفع و ضرر کر نہ سکا
جس نے سورج کی شعاؤں کو گرفتار کیا ۔۔۔۔۔ زندگی کی شب تاریک سحر کر نہ سکا

پختہ افکار کہاں ڈھونڈنے جائے کوئي ۔ اس زمانے کی ہوا رکھتی ہے ہر چیز کو خام
مدرسہ عقل کو آزاد تو کرتا ہے مگر ۔ چھوڑ جاتا ہے خیالات کو بے ربط و نظام
مردہ ۔ لادینی افکار سے افرنگ میں عشق ۔ عقل بے ربطیء افکار سے مشرق میں غلام

خودی کی موت سے مغرب کا اندرون بے نور ۔۔۔۔۔ خودی کی موت سے مشرق ہے مبتلائے جذّام
خودی کی موت سے روح عرب ہے بے تب و تاب ۔۔۔۔۔ بدن عراق و عجم کا ہے بے عرق و عظّام
خودی کی موت سے ہندی شکستہ بالوں پر ۔۔۔۔۔ قفس ہوا ہے حلال اور آشیانہ حرام
خودی کی موت سے پیر حرم ہوا مجبور ۔۔۔۔۔ کہ بیچ کھائے مسلمانون کا جامہء احرام

ملے گا منزل مقصود کا اسی کو سراغ ۔۔۔۔۔ اندھیری شب میں ہے چیتے کی آنکھ جس کا چراغ
میّسر آتی ہے فرصت فقط غلاموں کو ۔۔۔۔۔ نہیں ہے بندہء حر کے لئے جہاں میں فراغ
فروغ مغربیان خیرہ کر رہا ہے تجھے ۔۔۔۔۔ تری نظر کا نگہباں ہو صاحب مازاغ
وہ بزم عیش ہے مہمان یک نفس دو نفس ۔۔۔۔۔ چمک رہے ہیں مثال ستارہ جس کے ایاغ
کیا تجھ کو کتابوں نے کور ذوق اتنا ۔۔۔۔۔ صبا سے بھی نہ ملا تجھ کو بوئے گل کا سراغ

گلستاں میں نہیں حد سے گذرنا اچھا ۔۔۔۔۔ ناز بھی کر تو باندازہء رعنائی کر
پہلے خود دار تو مانند سکندر ہو لے ۔۔۔۔۔ پھر جہاں میں ہوس شوکت دلدائی کر

نظر آتے نہیں بے پردہ حقائق ان کو ۔۔۔۔۔ آنکھ جن کی ہوئی محکومی و تقلید سے کور

اس قوم کو شمشیر کی حاجت نہیں رہتی ۔۔۔۔۔ ہو جس کے جوانوں کی خودی صورت فولاد

This entry was posted in پيغام, روز و شب, طور طريقہ on by .

About افتخار اجمل بھوپال

رہائش ۔ اسلام آباد ۔ پاکستان ۔ ۔ ۔ ریاست جموں کشمیر کے شہر جموں میں پیدا ہوا ۔ پاکستان بننے کے بعد ہجرت پر مجبور کئے گئے تو پاکستان آئے ۔انجنئرنگ کالج لاہور سے بی ایس سی انجنئرنگ پاس کی اور روزی کمانے میں لگ گیا۔ ملازمت کے دوران اللہ نے قومی اہمیت کے کئی منصوبے میرے ہاتھوں تکمیل کو پہنچائے اور کئی ملکوں کی سیر کرائی جہاں کے باشندوں کی عادات کے مطالعہ کا موقع ملا۔ روابط میں "میں جموں کشمیر میں" پر کلِک کر کے پڑھئے میرے اور ریاست جموں کشمیر کے متعلق حقائق جو پہلے آپ کے علم میں شائد ہی آئے ہوں گے ۔ ۔ ۔ دلچسپیاں ۔ مطالعہ ۔ مضمون نویسی ۔ خدمتِ انسانیت ۔ ویب گردی ۔ ۔ ۔ پسندیدہ کُتب ۔ بانگ درا ۔ ضرب کلِیم ۔ بال جبریل ۔ گلستان سعدی ۔ تاریخی کُتب ۔ دینی کتب ۔ سائنسی ریسرچ کی تحریریں ۔ مُہمْات کا حال

4 thoughts on “علامہ اقبال

  1. محمد انور

    آج کا دن نہ صرف اقبال کے پیام کا احیا کا دن ہے بلکہ مزید اس بات کی ضرورت ہے کہ ہم اس امر کا بھی تجزیہ بھی کریں‌کہ بحیثت قوم ہم نے گزشتہ سالوں کا کھویا اور کیا پا پا ۔
    علامہ اقبال کی مشعل کو روشن کرنے کا شکریہ

  2. میرا پاکستان

    اب تو سکولوں میں‌بھی قومی شخصیات کے دن جوش و خروش سے نہیں‌منائے جاتے۔ عوام اب ایسے دنوں کو چھٹی کا ذریعہ سمجھتے ہیں بس اور کچھ نہیں۔ حکومتیں بھی ایسے دنوں کو سرکاری سطح پر منانے سے گریز کرنے لگی ہیں تا کہ ان عظیم شخصیات کے سامنے وہ اپنے کرتوتوں کی وجہ سے شرمندگی سے بچ سکیں۔

  3. افتخار اجمل بھوپال Post author

    محمد انور صاحب
    جن بدقسمت لوگوں کو اللہ کا فرمان یاد نہیں وہ علامہ اقبال کا کہا کیسے یاد رکھیں گے ۔ قرآن ہمیں خود احتسابی سکھاتا ہے ۔ رسول اللہ سیّدنا محمد ﷺ نے خود احتسابی کی اور ہمیں اس کی ھدائت کی ۔ صحابہ کرام رضی اللہ عنہم نے خود احتسابی کی ۔ ہم خود کو بدلتے نہیں چاہتے ہیں اسلام بدل جائے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

:wink: :twisted: :roll: :oops: :mrgreen: :lol: :idea: :evil: :cry: :arrow: :?: :-| :-x :-o :-P :-D :-? :) :( :!: 8-O 8)