کيا خُوب کہی ؟

بحوالہ اين آر او کے متعلق سپريم کا فيصلہ اور صدر کے خلاف سوٹزرلينڈ کيس

گزشتہ روز یہاں سینٹ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم گیلانی نے کہا کہ
اگر ادارے ہماری عزت کریں تو ہم اداروں کی عزت کریں گے
صدر کو آصف زرداری آئین کے تحت استثنیٰ حاصل ہے جب تک وہ صدر کے منصب پر فائز ہیں ان کے خلاف بیرون ملک اور اندرون ملک کوئی مقدمہ نہیں چلایا جا سکتا
صدر مملکت آرمڈ فورسز کے سپریم کمانڈر ہیں اور پارلیمینٹ کے 442 ارکان نے انہیں صدر پاکستان منتخب کیا اور وہ پارلیمینٹ کا حصہ ہیں، پارلیمینٹرین کی ذمہ داری ہے کہ وہ پارلیمینٹ کی عزت کروائیں

ايک سوال ۔ کوئی ہے جو بتائے کہ آصف علی زرداری کے پاس سوٹزرلينڈ کے بنکوں ميں ايک ارب ڈالر سے زائد کيش اور پاکستان سے باہر کئی اربوں کی قيمتی جائيداد کہاں سے آئی ؟

بحوالہ يو ايس ايڈ

کیری لوگر بل کے ایک محرک اور انڈیانا سے منتخب ہونے والے سینیٹر رچرڈ لوگر نے انکشاف کیا ہے کہ پاکستان کو دی گئی 133 ملین ڈالر کی نقد امداد اپنے مقصد کے مطابق سوات اور مالاکنڈ کے بے گھرہونے والے افراد کو نہیں پہنچ پا ئی ۔ سینیٹر لوگر نے امریکی انسپکٹر جنرل کی رپورٹ مجریہ 2009ء کا حوالہ دیا جس میں کہا گیا ہے کہ 44 ملین ڈالر کی نقد رقم بے گھر افراد کو نہیں پہنچ سکی۔ سینیٹر رچرڈ لوگر نے رواں برس شروع ہونے والی 89 ملین ڈالر نقدر رقوم کی منتقلی کے حوالے سے اسی قسم کے تحفظات کا اظہار کیا

زرداری يا زورداری

گزشتہ روز وفاقی اردو یونیورسٹی کے وائس چانسلر کو لکھے گئے استعفیٰ میں پروفیسر رانا ایم شمیم نے موقف اختیار کیا ہے کہ وہ موجودہ ناموافق حالات میں کام جاری نہیں رکھ سکتے لہٰذا وہ پروفیسر اور ڈین کی حیثیت سے مستعفی ہورہے ہیں اور وائس چانسلر ان کا استعفیٰ منظور کرلیں
ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت کی ایک اعلیٰ شخصیت نے رانا ایم شمیم کو پیغام بھیجا تھا کہ وہ صدر آصف علی زرداری پر تشدد کرنے کے الزام میں ملوث سیکریٹری پراسیکیوشن پنجاب رانا مقبول کی وکالت سے دستبردار ہوجائیں کیونکہ رانا مقبول کی وکالت کرنا صدر آصف علی زرداری کی مخالفت کرنے کے برابر ہے لہٰذا رانا مقبول کی وکالت چھوڑ دیں یا پھر وفاقی اردو یونیورسٹی میں شعبہ قانون کے ڈین اور پروفیسر کی حیثیت سے استعفیٰ دے دیں
ہفتہ کو نمائندہ جنگ سے بات کرتے ہوئے رانا ایم شمیم نے بتایا کہ وہ رانا مقبول کی وکالت کرنا نہیں چھوڑیں گے کیونکہ یہ ان کاحق ہے کہ وہ کسی کی وکالت کرتے ہیں اور کسی کی نہیں لہٰذا انہوں نے وفاقی اردو یونیورسٹی کے وائس چانسلر کو استعفیٰ بھیج دیا ہے

This entry was posted in خبر on by .

About افتخار اجمل بھوپال

رہائش ۔ اسلام آباد ۔ پاکستان ۔ ۔ ۔ ریاست جموں کشمیر کے شہر جموں میں پیدا ہوا ۔ پاکستان بننے کے بعد ہجرت پر مجبور کئے گئے تو پاکستان آئے ۔انجنئرنگ کالج لاہور سے بی ایس سی انجنئرنگ پاس کی اور روزی کمانے میں لگ گیا۔ ملازمت کے دوران اللہ نے قومی اہمیت کے کئی منصوبے میرے ہاتھوں تکمیل کو پہنچائے اور کئی ملکوں کی سیر کرائی جہاں کے باشندوں کی عادات کے مطالعہ کا موقع ملا۔ روابط میں "میں جموں کشمیر میں" پر کلِک کر کے پڑھئے میرے اور ریاست جموں کشمیر کے متعلق حقائق جو پہلے آپ کے علم میں شائد ہی آئے ہوں گے ۔ ۔ ۔ دلچسپیاں ۔ مطالعہ ۔ مضمون نویسی ۔ خدمتِ انسانیت ۔ ویب گردی ۔ ۔ ۔ پسندیدہ کُتب ۔ بانگ درا ۔ ضرب کلِیم ۔ بال جبریل ۔ گلستان سعدی ۔ تاریخی کُتب ۔ دینی کتب ۔ سائنسی ریسرچ کی تحریریں ۔ مُہمْات کا حال

2 thoughts on “کيا خُوب کہی ؟

  1. Pingback: Tweets that mention What Am I میں کیا ہوں ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ » Blog Archive » کيا خُوب کہی ؟ -- Topsy.com

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

:wink: :twisted: :roll: :oops: :mrgreen: :lol: :idea: :evil: :cry: :arrow: :?: :-| :-x :-o :-P :-D :-? :) :( :!: 8-O 8)