ایسا کیوں ؟

عیسائی راہبہ [Nun] سوائے چہرے کے اپنا سارا جسم کپڑوں میں ڈھانپ کر رکھے تو وہ قابلِ احترام ہے کیونکہ وہ پُجاری ہے
اگر کوئی مسلمان عورت اپنے دین کی پیروی میں اپنے جسم کو کپڑوں سے ڈھانپے تو اُسے مظلوم گردانا جاتا ہے

جب یہودی داڑھی رکھے تو یہ اُس کا مذہبی فریضہ کہا جاتا ہے
مسلمان داڑھی رکھے تو اُسے انتہاء پسند کہا جاتا ہے

اگر عیسائی یا یہودی عورت بچوں اور دوسرے گھریلو کاموں کی دیکھ بھال کیلئے گھر پر رہے تو کہا جاتا ہے کہ وہ اپنے گھر کو بنانے کیلئے قربانی دے رہی ہے
جب مسلمان عورت اسی مقصد کیلئے گھر پر رہے تو اُسے قید سے آزاد کرانے کی اشتہار بازی کی جاتی ہے

اگر عیسائی یا یہودی کسی کو قتل کر دے تو یہ اس کا ذاتی معاملہ ہوتا ہے اور اس کا عیسائیت یا یہودیت سے کوئی تعلق نہیں ہوتا
اگر مسلمان کے ہاتھوں قتل ہو جائے تو موردِ الزام اس کا دین اسلام ٹھہرایا جاتا ہے

This entry was posted in روز و شب, معاشرہ, منافقت on by .

About افتخار اجمل بھوپال

رہائش ۔ اسلام آباد ۔ پاکستان ۔ ۔ ۔ ریاست جموں کشمیر کے شہر جموں میں پیدا ہوا ۔ پاکستان بننے کے بعد ہجرت پر مجبور کئے گئے تو پاکستان آئے ۔انجنئرنگ کالج لاہور سے بی ایس سی انجنئرنگ پاس کی اور روزی کمانے میں لگ گیا۔ ملازمت کے دوران اللہ نے قومی اہمیت کے کئی منصوبے میرے ہاتھوں تکمیل کو پہنچائے اور کئی ملکوں کی سیر کرائی جہاں کے باشندوں کی عادات کے مطالعہ کا موقع ملا۔ روابط میں "میں جموں کشمیر میں" پر کلِک کر کے پڑھئے میرے اور ریاست جموں کشمیر کے متعلق حقائق جو پہلے آپ کے علم میں شائد ہی آئے ہوں گے ۔ ۔ ۔ دلچسپیاں ۔ مطالعہ ۔ مضمون نویسی ۔ خدمتِ انسانیت ۔ ویب گردی ۔ ۔ ۔ پسندیدہ کُتب ۔ بانگ درا ۔ ضرب کلِیم ۔ بال جبریل ۔ گلستان سعدی ۔ تاریخی کُتب ۔ دینی کتب ۔ سائنسی ریسرچ کی تحریریں ۔ مُہمْات کا حال

7 thoughts on “ایسا کیوں ؟

  1. اجمل Post author

    ماوراء صاحبہ
    آپ کے اس فقرے نے مجھے باور کرایا ہے کہ بہت سے پڑھے لکھے مسلمان قرآن شریف یا تو پڑھتے نہیں یا اسے سمجھنے کی کوشش نہیں کرتے ۔ چنانچہ آپ کے سوال کے جواب میں مجھے ایک تحریر سرِ ورق پر لکھنا پڑھے گی ۔ ابھی میں کسی کام سے جا رہا ہوں ۔ انشاء اللہ اتوار یا پیر کے روز لکھوں گا

  2. ماوراء

    ضرور اجمل چچا۔ لیکن میری زیادہ عزت افزائی نہ کیجیے گا۔ بس آپ کی یہ تحریر پڑھ کر دکھی ہو گئی تھی، اللہ سے اکثر میں ایسے شکوے کرتی ہی رہتی ہوں۔

  3. اجمل Post author

    ماوراء صاحبہ
    میں آپ کی تواضح تو اُس وقت کروں گا جب آپ کے کان تک میرا ہاتھ پہنچ سکے ۔ ابھی تو یہ بھی معلوم نہیں کہ آپ کا کان کرّہ ارض کے کس حصے پر پایا جاتا ہے
    :lol:

  4. شاہدہ اکرم

    مُحترم اجمل انکل جی
    السلامُ عليکُم
    مزاج بخير،انکل جی اسے شايد نہيں يقينی دورنگی يا دوغلا پن کہتے ہيں کہ اپنے لۓ معيار کُچھ اور ہوتے ہيں اور دُوسروں کے لۓ دُوسرے معيار ،يہ الگ بات ہے کہ اپنے انہی دوہرے معياروں کی وجہ سے بہت نہيں تو کُچھ نا کُچھ نُقصان تو يہ لوگ بھی اُٹھا ہی رہے ہيں ليکن باز نہيں آتے اپنی حرکتوں سے
    مع السلام
    شاہدہ اکرم

  5. Pingback: What Am I میں کیا ہوں ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ » Blog Archive » ماوراء صاحبہ کا سوال

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

:wink: :twisted: :roll: :oops: :mrgreen: :lol: :idea: :evil: :cry: :arrow: :?: :-| :-x :-o :-P :-D :-? :) :( :!: 8-O 8)