میری کمزوریوں سے فائدہ

ہفتہ بھر میں بیمار کیا رہا جوانوں نے اُدھم مچا دیا اور دھڑادھڑ ایک دوسرے کو نتھی کرنے لگے ۔ اور مجھے شاید پنساری کی دُکان کا لفافہ یا سرکاری دفتر کا خط سمجھ لیا کہ سب نے نتھی کرنا شروع کر دیا ۔ اتنی گرمی میں میری کمزوری کو دُور کرنے کیلئے بڑا سا میٹھا تربوز بھیجنے کی بجائے 16 جون کو اُردو بلاگ والے قدیر احمد صاحب نے ۔ 17 جون کو ضمیمہ والے عارف انجم صاحب نے ۔ 19 جون کو ابو شامل صاحب نے اور 20 جون 2008ء کو اکرام صاحب نے حُکم صارد کیا کہ میں بچوں کے مندرجہ ذیل کھیل میں ملوّث ہو جاؤں ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ایک صاحب نے اغواء کاروں کی طرح دھمکی دی “پولیس کو مطلع کرنے کی کوشش نہ کیجئے اور خاموشی سے ٹیگنگ کے مطالبات پر عمل کر ڈالئے”۔ اسے کہتے ہیں کمزوریوں سے فائدہ اُٹھانا

بقول علّامہ اقبال صاحب ۔ “برق گرتی ہے تو بیچارے مسلمانوں پر ”

قوانین
1 ۔ کھیل کے قوانین جوابات دیتے وقت ارسال کرنا ہوں گے ۔
جِس نے آپ کو اس کھیل سے منسلک کیا ہے، اُسکی تحریر کا حوالہ دینا لازمی ہے ۔2 ۔
3 ۔ سوالات کے آخر میں آپ مزید پانچ لوگوں کو اِس کھیل سے منسلک کریں گے، اور اس کی اطلاع متعلقہ بلاگ پر نئی تحریر میں تبصرہ کر کے دیں گے ۔

سوالات اور جوابات

1 ۔ اِس وقت آپ نے کِس رنگ کی جرابیں پہنی ہوئی ہیں؟
جواب ۔ میں گھر میں جرابیں صرف سردیوں میں پہنتا ہوں

2 ۔کیا آپ اس وقت کچھ سُن رہے ہیں؟ اگر ہاں تو کیا؟
جواب ۔ جی نہیں ۔ میں اس وقت لکھ رہا ہوں

3 ۔ سب سے آخری چیز جو آپ نے کھائی تھی کیا تھی؟
جواب ۔ جب تک زندہ ہوں کھاتا رہوں گا ۔ آخری کونسی ہو گی صرف اللہ جانتا ہے ۔

4 ۔ سب سے آخری فلم کونسی دیکھی ہے؟
جواب ۔ یاد نہیں ۔ غیر اہم چیز کو پچیس تیس سال یاد رکھنا ضروری نہیں سمجھتا

5 ۔ آپ کا پسندیدہ قول کیا ہے؟
جواب ۔ نیکی کر دریا میں ڈال ۔ اللہ بخشے میرے دادا جان کہا کرتے تھے جن کا انتقال 1955ء میں ہوا

6 ۔ کل رات بارہ بجے آپ کیا کر رہے تھے؟
جواب ۔ کون سے 12 بجے ؟ امریکہ کے ۔ پاکستان کے یا میرے ؟

7 ۔ کِس مشہور شخصیت زندہ یا مردہ سے آپ مِلنا چاہیں گے؟
جواب الف ۔ زندوں میں ۔ ایسے شخص کو ملنا چاہتا ہوں جو اتنا خود دار ہو کہ ظالم حاکم کے سامنے کلمہ حق بلاتأمل کہہ دے ۔
ایک طالب عِلم ذہن میں آ رہا ہے جس نے مئی 2006ء کو کنوینشن سینٹر اسلام آباد میں قوم کو خودی کا راستہ دکھایا تھا ۔ جامعہ علوم الاسلامیہ العالمیہ ۔ بنوری ٹاؤن ۔ کراچی کا طالبعلم سیّد عدنان کاکاخیل ۔
اس کے بعد 18جون 2008ء کو اسلام آباد کے جلسہ تقسیم اسناد میں ہاورڈ یونیورسٹی میں زیرِ تعلیم سرمد خُرم نے ایک بار پھر خودی کی مشعل جلائی ہے ۔ اللہ کرے اب تیزی سے مشعل سے مشعل جلتی جائے اور خودی کا ایک کارواں بن جائے ۔

جواب ب ۔ مُردوں میں ۔ دعا ہے اور سب قارئین سے بھی دعا کی استدعا ہے کہ اللہ سُبحانُہُ و تعالٰی میری خطائیں معاف کر کے مجھے جنّت میں جگہ دے دے تو نبی صلی اللہ علیہ و آلہ و سلّم کا دیدار نصیب ہو جائے اور پھر اسی وجہ سے اپنی والدہ کا بھی ۔

8 ۔ غصہ میں اپنے آپ کو پُرسکون کِس طرح کرتے ہیں؟
جواب ۔ غُصہ ہی تو ہے جو مجھے آتا نہیں اور اگر کبھی آ جائے تو اعوذ باللہ من الشیطان الرجیم پڑھتا ہوں

9 ۔ فون پر سب سے آخر میں کِس سے بات ہوئی؟
جواب ۔ کسی بہن بھائی سے ہوئی ہو گی

10 ۔ آپ کا پسندیدہ تہوار کونسا ہے؟
جواب ۔ جس دن مجھے سب چہرے حقیقی بشاش نظر آئیں ۔
یا اللہ ۔ میری زندگی میں وہ گُمشدہ دن پھر لوٹ آئے ۔

11 ۔ حسب قواعد میں نتھی کرتا ہوں‌ ان بلاگرز کو ۔
جو بلاگرز ابھی تک نتھی نہیں کئے گئے اُن سے التماس ہے کہ کم ازکم 5 اپنے آپ کو یہاں نتھی کر کے ممنون فرمائیں ۔ مجھے کسی کی ذرا سی دل آزاری بھی قبول نہیں اسلئے میں نے کسی کو نتھی نہیں کیا ۔

This entry was posted in روز و شب, مجبوری on by .

About افتخار اجمل بھوپال

رہائش ۔ اسلام آباد ۔ پاکستان ۔ ۔ ۔ ریاست جموں کشمیر کے شہر جموں میں پیدا ہوا ۔ پاکستان بننے کے بعد ہجرت پر مجبور کئے گئے تو پاکستان آئے ۔انجنئرنگ کالج لاہور سے بی ایس سی انجنئرنگ پاس کی اور روزی کمانے میں لگ گیا۔ ملازمت کے دوران اللہ نے قومی اہمیت کے کئی منصوبے میرے ہاتھوں تکمیل کو پہنچائے اور کئی ملکوں کی سیر کرائی جہاں کے باشندوں کی عادات کے مطالعہ کا موقع ملا۔ روابط میں "میں جموں کشمیر میں" پر کلِک کر کے پڑھئے میرے اور ریاست جموں کشمیر کے متعلق حقائق جو پہلے آپ کے علم میں شائد ہی آئے ہوں گے ۔ ۔ ۔ دلچسپیاں ۔ مطالعہ ۔ مضمون نویسی ۔ خدمتِ انسانیت ۔ ویب گردی ۔ ۔ ۔ پسندیدہ کُتب ۔ بانگ درا ۔ ضرب کلِیم ۔ بال جبریل ۔ گلستان سعدی ۔ تاریخی کُتب ۔ دینی کتب ۔ سائنسی ریسرچ کی تحریریں ۔ مُہمْات کا حال

4 thoughts on “میری کمزوریوں سے فائدہ

  1. امید

    اللہ تعالی آپ کو صحت کاملہ عطا کرے -آمین

    اور سرمد خرم نے تو واقعی خوش کیا ہے

  2. ابوشامل

    افتخار صاحب! آپ کی طبیعت کی ناسازی کا سن کر افسوس ہوا۔ اللہ آپ کو صحت کاملہ و عاجلہ عطا فرمائے (آمین)۔

  3. اجمل Post author

    اُمید صاحب ۔ ماوراء صاحبہ اور ابو شامل صاحب ۔ السلام علیکم
    آپ سب کا شکریہ ۔ جزاک اللہ خیرٌ ۔ الحمدللہ اب میں بہت بہتر ہوں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

:wink: :twisted: :roll: :oops: :mrgreen: :lol: :idea: :evil: :cry: :arrow: :?: :-| :-x :-o :-P :-D :-? :) :( :!: 8-O 8)