خوش قسمت

جس کے بنک اکاؤنٹ میں اور بٹوے میں رقم ہے وہ دنیا کے صرف 8 فیصد امیر ترین لوگوں میں سے ہے

جس کے والدین زندہ ہیں اور اس کے پاس ہیں وہ دنیا کے قلیل خوش اخلاق لوگوں میں سے ہے

جو شخص یہ تحریر پڑھ سکتا ہے وہ دنیا کے دو ارب لوگوں سے زیادہ خوش قسمت ہے جو کہ پڑھ نہیں سکتے

جو کسی کا ہاتھ تھام سکتا ہے ۔ کسی کو گلے لگا سکتا ہے ۔ کسی کے کاندھے پر تھپکی دے سکتا ہے اُسے مبارک ہو کہ وہ ہردم اللہ کی خوشنودی کماتا ہے

This entry was posted in پيغام, روز و شب on by .

About افتخار اجمل بھوپال

رہائش ۔ اسلام آباد ۔ پاکستان ۔ ۔ ۔ ریاست جموں کشمیر کے شہر جموں میں پیدا ہوا ۔ پاکستان بننے کے بعد ہجرت پر مجبور کئے گئے تو پاکستان آئے ۔انجنئرنگ کالج لاہور سے بی ایس سی انجنئرنگ پاس کی اور روزی کمانے میں لگ گیا۔ ملازمت کے دوران اللہ نے قومی اہمیت کے کئی منصوبے میرے ہاتھوں تکمیل کو پہنچائے اور کئی ملکوں کی سیر کرائی جہاں کے باشندوں کی عادات کے مطالعہ کا موقع ملا۔ روابط میں "میں جموں کشمیر میں" پر کلِک کر کے پڑھئے میرے اور ریاست جموں کشمیر کے متعلق حقائق جو پہلے آپ کے علم میں شائد ہی آئے ہوں گے ۔ ۔ ۔ دلچسپیاں ۔ مطالعہ ۔ مضمون نویسی ۔ خدمتِ انسانیت ۔ ویب گردی ۔ ۔ ۔ پسندیدہ کُتب ۔ بانگ درا ۔ ضرب کلِیم ۔ بال جبریل ۔ گلستان سعدی ۔ تاریخی کُتب ۔ دینی کتب ۔ سائنسی ریسرچ کی تحریریں ۔ مُہمْات کا حال

8 thoughts on “خوش قسمت

  1. shahidaakram

    محترم اجمل انکل جی
    السلامُ عليکُم
    اُمّيد ہے آپ بخير ہوں گے ايسی تحرير انکل آپ ہی لکھ سکتے ہيں جس کو پڑھ کر ہم اپنے کو خُوش قسمت سمجھ رہے ہيں کہ مُجھے تو ہر نُقطہ ہی نُقطہء اوّل دکھائ دے رہا ہے گو فی الوقت تو يہ بات ميرے جزباتی ہونے کا ثبُوت ہے کہ
    „جس کے والدین زندہ ہیں اور اس کے پاس ہیں وہ دنیا کے قلیل خوش اخلاق لوگوں میں سے ہے„
    کيُونکہ کل ميرے پيارے ابُو کی دسويں برسی تھی اور ميں ہر لمحے ہر پل اُ ن کی يادوں کے ساتھ اُن کی اُس زندگی کے لۓ دُعاگو تھی جو ہم ديکھ نہيں پا رہے کہ کاش وہ ہمارے ساتھ ہوتے اور ہم يہ ادراک کر پاتے جو اُن کے جانے کے بعد کر پا رہے ہيں کہ کيا کھو ديا ہے( ميں اپنے بہن بھائيوں سے اس فورم کے واسطے سے درخواست گُزار ہُوں کہ ميرے ابُو کے لۓ دُعا کيجيۓ اُن کے درجات کي بُلندي کے لۓ)
    ليکن ماشاءاللہ جو باقي باتيں آپ نے چند جُملوں ميں کہہ دی ہيں وہ واقعی ہميں خُوش قسمت بنا رہی ہيں کہ ہم بھی ان معنوں ميں خُوش قسمتوں ميں شامل ہيں کاش کہ ہم بھی آخرُالزکروں ميں شُمار ہوں اور اللہ تعاليٰ کی خُوشنُودی پانے والوں ميں سے ہوں،آمين
    اپنا خيال رکھيۓ گا اور دُعاؤں ميں ياد رکھيۓ گا
    مع السلام
    شاہدہ اکرم

  2. اجمل Post author

    الف نظامی صاحب اور ماوراء صاحبہ
    دعا کیجئے کہ اللہ سُبحانُہُ و تعالٰی مجھے خوش نصیبوں میں شامل کرے ۔

  3. اجمل Post author

    شاہدہ اکرم صاحبہ ۔ السلام علیکم
    اللہ آپ کے والد صاحب کو جوارِ رحمت میں جگہ دے ۔ اصل خوش قسمت وہی ہے جس نے اپنے والدین کی بھرپور خدمت کی ہو اور اُن کو ہمیشہ خوش رکھا ہو ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

:wink: :twisted: :roll: :oops: :mrgreen: :lol: :idea: :evil: :cry: :arrow: :?: :-| :-x :-o :-P :-D :-? :) :( :!: 8-O 8)