تيز رفتار ترقی ؟ ؟ ؟

انٹرنيٹ پر سرگرداں تھا کہ ميری نظر ٹرانسپيرينسی انٹرنيشنل کی 11 اگست 2006 کو شائع ہونے والی رپورٹ پر اٹکی اور پاکستان کے متعلق دلچسپ معلومات حاصل ہوئيں ۔ 

حکومتوں کی کرپشن کا تقابلی جائزہ

بينظير کا پہلا دور ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 1988 سے 1990۔ ۔ ۔ 8.00  فيصد

نواز شريف کا پہلا دور ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 1990 سے 1993 ۔ ۔ 10.00  فيصد

بينظير کا دوسرا دور ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 1993 سے 1996 ۔ ۔ 48.00  فيصد

نواز شريف کا دوسرا دور ۔ ۔ ۔  1996 سے 1999 ۔ ۔ 34.00  فيصد

پرويز مشرف کا پہلا دور ۔ ۔ ۔ 1999 سے 2002 ۔ ۔ 33.69  فيصد

پرويز مشرف کا دوسرا دور ۔ ۔ ۔ ۔ 2002 سے 2006 ۔ ۔ 67.31  فيصد 

صوبائی کرپشن کی موجودہ صورتِ حال کا تقابلی جائزہ

پنجاب ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 42.7   فيصد

سندھ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 28.7   فيصد

بلوچستان ۔ ۔  15.1  فيصد

سرحد ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 13.5  فيصد 

محکموں کا تقابلی جائزہ بالحاظ کرپشن

سب سے زيادہ کرپٹ سب سے اوپر اور سب سے کم کرپٹ سب سے نيچے

سن 2002 ميں ۔ ۔ سن 2006 ميں

پوليس  ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ پوليس 

پاور  ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ پاور

ٹيکسيشن  ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ عدالتی نظام

عدالتی نظام  ۔ ۔ ۔ ۔  ۔ لينڈ

کسٹم  ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔  ٹيکسيشن

محکمہ صحت ۔ ۔ ۔ ۔ کسٹم

لينڈ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ محکمہ صحت

محکمہ تعليم ۔ ۔ ۔ محکمہ تعليم

ريلوے  ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ريلوے

بينک  ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔  بينک 

اداروں کی کرپشن کا تخمينہ

جو بالکل کرپٹ نہيں اُس کے نمبر صفر ۔ انتہائی کرپٹ کے 4 نمبر 

ادارہ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔  کرپشن کے نمبر

سياسی جماعتيں ۔ ۔ ۔  ۔ 3.0 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 75.0 فيصد

سينٹ اور اسمبلياں ۔ ۔ ۔ 2.7 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 67.5 فيصد

پوليس ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 2.6 ۔ ۔۔ ۔ ۔ 65.0 فيصد

عدالتی نظام ۔ ۔ ۔۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 2.5 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 62.5 فيصد

نجی تجارتی ادارے۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 2.4 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 60.0 فيصد

ٹيکس ريوينيو ۔ ۔ ۔۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 2.4 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 60.0 فيصد

کسٹم ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔  ۔ ۔ ۔ ۔ 2.3 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔  57.5 فيصد

ذرائع ابلاغ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 2.2 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 55.0 فيصد

ميڈيکل سروسز ۔ ۔  ۔ ۔ ۔ ۔ 2.2 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 55.0 فيصد

يوٹيليٹيز ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔  ۔ ۔ ۔ ۔ 2.0 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 50.0 فيصد

تعليمی ادارے ۔ ۔  ۔ ۔ ۔ ۔ 2.0 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 50.0 فيصد

فوج ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 1.9 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 47.5 فيصد

رجسٹری و پرمٹ سروسز ۔ 1.9 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 47.5 فيصد

اين جی اوز ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔  ۔ ۔ ۔ ۔  1.8 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 45.0 فيصد

مذہبی ادارے  ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 1.6 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 40.0 فيصد  

نوٹ ۔ مذہبی ادارے کا مطلب يہاں متحدہ مجلسِ عمل يا ايم ايم اے نہيں ہے  

This entry was posted in خبر on by .

About افتخار اجمل بھوپال

رہائش ۔ اسلام آباد ۔ پاکستان ۔ ۔ ۔ ریاست جموں کشمیر کے شہر جموں میں پیدا ہوا ۔ پاکستان بننے کے بعد ہجرت پر مجبور کئے گئے تو پاکستان آئے ۔انجنئرنگ کالج لاہور سے بی ایس سی انجنئرنگ پاس کی اور روزی کمانے میں لگ گیا۔ ملازمت کے دوران اللہ نے قومی اہمیت کے کئی منصوبے میرے ہاتھوں تکمیل کو پہنچائے اور کئی ملکوں کی سیر کرائی جہاں کے باشندوں کی عادات کے مطالعہ کا موقع ملا۔ روابط میں "میں جموں کشمیر میں" پر کلِک کر کے پڑھئے میرے اور ریاست جموں کشمیر کے متعلق حقائق جو پہلے آپ کے علم میں شائد ہی آئے ہوں گے ۔ ۔ ۔ دلچسپیاں ۔ مطالعہ ۔ مضمون نویسی ۔ خدمتِ انسانیت ۔ ویب گردی ۔ ۔ ۔ پسندیدہ کُتب ۔ بانگ درا ۔ ضرب کلِیم ۔ بال جبریل ۔ گلستان سعدی ۔ تاریخی کُتب ۔ دینی کتب ۔ سائنسی ریسرچ کی تحریریں ۔ مُہمْات کا حال

2 thoughts on “تيز رفتار ترقی ؟ ؟ ؟

  1. Dr.

    Jazakallah for your detailed reply at my blog. i am honoured to have ur comments there.. and i am really impressed with ur blog..MashaAllah..many p0rayers for ur health n u…do remeber me i ur prayers
    actually i am collecting the data for my article.and i wanted ur permission if i can use ur comments with ur reference????

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

:wink: :twisted: :roll: :oops: :mrgreen: :lol: :idea: :evil: :cry: :arrow: :?: :-| :-x :-o :-P :-D :-? :) :( :!: 8-O 8)