ایک در بند ہوتا ہے تو

جب خوشیوں کا ایک دروازہ بند ہوتا ہے تو اللہ سُبحَانُہُ وَ تَعَالی دوسرا دروازہ کھول دیتا ہے
لیکن اکثر ایسا ہوتا ہے کہ ہماری نظریں بند دروازے پہ لگی رہتی ہیں اور ہم دوسرے کھُلنے والے دروازہ کی طرف دیکھتے ہی نہیں

This entry was posted in روز و شب on by .

About افتخار اجمل بھوپال

رہائش ۔ اسلام آباد ۔ پاکستان ۔ ۔ ۔ ریاست جموں کشمیر کے شہر جموں میں پیدا ہوا ۔ پاکستان بننے کے بعد ہجرت پر مجبور کئے گئے تو پاکستان آئے ۔انجنئرنگ کالج لاہور سے بی ایس سی انجنئرنگ پاس کی اور روزی کمانے میں لگ گیا۔ ملازمت کے دوران اللہ نے قومی اہمیت کے کئی منصوبے میرے ہاتھوں تکمیل کو پہنچائے اور کئی ملکوں کی سیر کرائی جہاں کے باشندوں کی عادات کے مطالعہ کا موقع ملا۔ روابط میں "میں جموں کشمیر میں" پر کلِک کر کے پڑھئے میرے اور ریاست جموں کشمیر کے متعلق حقائق جو پہلے آپ کے علم میں شائد ہی آئے ہوں گے ۔ ۔ ۔ دلچسپیاں ۔ مطالعہ ۔ مضمون نویسی ۔ خدمتِ انسانیت ۔ ویب گردی ۔ ۔ ۔ پسندیدہ کُتب ۔ بانگ درا ۔ ضرب کلِیم ۔ بال جبریل ۔ گلستان سعدی ۔ تاریخی کُتب ۔ دینی کتب ۔ سائنسی ریسرچ کی تحریریں ۔ مُہمْات کا حال

7 thoughts on “ایک در بند ہوتا ہے تو

  1. پردیسی

    السلام علیکم
    سبحان اللہ ، کیا خوب معرفت کی بات کہی ہے آپ نے ، اللہ سبحانہ و تعالیٰٰ آپ کو ہمیشہ خوش رکھے آمین۔

  2. عائدشہ

    انکل یہ کتنی سچ بات ہے نا کہ انسان نا امید بہت جلدی ہوجاتا ہے پر اتنی ہی جلدی وہ پھر محنت نہیں کرتا۔۔۔ کیوں ہوتا ہے ایسا؟

  3. Asma

    صرف خوشیوں ہی کی کیا بات ہے ۔۔۔زندگی میں کسی بھی مقام پر ایک در بند ہوتا ہے تو اللہ سَو اور در کھولنے والی ذات ہے ۔۔۔ گر کہ ہم دھیان دیں ۔۔۔ اور دعا پہ قوی یقیں رکھیں

  4. Hypocrisy Thy Name منافقت ؟

    عائشہ بیٹی
    انسان جب پیدا کرنے والے سے دُور ہو جاتا ہے تو مادی چیزیں جو سامنے نظر آتی ہیں اُن پر بھروسہ کرنے لگتا ہے پھر اُسے اللہ کی مدد نظر نہیں آتی

    اسماء صاحبہ
    خوشی ہنسنے کا نام تو کوتاہ اندیشوں نے رکھ دیا ہے ۔ کبھی آپ نے دیکھا کہ اچانک بہت خوشی ملنے سے آنکھوں سے آنسوؤں کی برسات جاری ہو جاتی ہے ۔ خوشی دراصل کِسی چیز کے حصول یا کامیابی کو کہتے ہیں ۔ اوّل بات اللہ پر یقین ہے ۔ اِس کے بغیر کچھ نہیں ۔

  5. اجمل

    عائشہ بیٹی
    انسان جب پیدا کرنے والے سے دُور ہو جاتا ہے تو مادی چیزیں جو سامنے نظر آتی ہیں اُن پر بھروسہ کرنے لگتا ہے پھر اُسے اللہ کی مدد نظر نہیں آتی

    اسماء صاحبہ
    خوشی ہنسنے کا نام تو کوتاہ اندیشوں نے رکھ دیا ہے ۔ کبھی آپ نے دیکھا کہ اچانک بہت خوشی ملنے سے آنکھوں سے آنسوؤں کی برسات جاری ہو جاتی ہے ۔ خوشی دراصل کِسی چیز کے حصول یا کامیابی کو کہتے ہیں ۔ اوّل بات اللہ پر یقین ہے ۔ اِس کے بغیر کچھ نہیں ۔

  6. Ayesha

    آج کل میں قرآن بمعہ ترجمے و تفسیر کے پڑھ رہی ہوں اور شچ پوچھے تو اتنا سکون ملتا ہے کہ بس۔۔ اور امید اور ہمت بڑھ جاتی ہے، پر آج کل کچھ ایسا بھی ہو رہا ہے کہ جب کوئی آزمائش آتی تو کافی اداس ہوجاتی ہوں میرے ساتھ ایسا کبھی نہیں ہوا۔۔ انکل دعائوں میں دیا رکھیے گا۔۔

    اللہ نگہبان۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

:wink: :twisted: :roll: :oops: :mrgreen: :lol: :idea: :evil: :cry: :arrow: :?: :-| :-x :-o :-P :-D :-? :) :( :!: 8-O 8)