خوشی صرف امیروں کی میراث ہے ؟ ؟ ؟

ضروری نہیں کہ خوش ترین شخص کے پاس ہر نعمت یا ہر آسائش ہوخوشی کا راز یہ ہے کہ انسان اپنی دسترس میں آنے والی چیز سے بھرپور فائدہ اٹھاۓ
اور اللہ کا شکر ادا کرے کیونکہ اگر وہ بھی نہ ملتا تو کیا کرتا

This entry was posted in روز و شب on by .

About افتخار اجمل بھوپال

رہائش ۔ اسلام آباد ۔ پاکستان ۔ ۔ ۔ ریاست جموں کشمیر کے شہر جموں میں پیدا ہوا ۔ پاکستان بننے کے بعد ہجرت پر مجبور کئے گئے تو پاکستان آئے ۔انجنئرنگ کالج لاہور سے بی ایس سی انجنئرنگ پاس کی اور روزی کمانے میں لگ گیا۔ ملازمت کے دوران اللہ نے قومی اہمیت کے کئی منصوبے میرے ہاتھوں تکمیل کو پہنچائے اور کئی ملکوں کی سیر کرائی جہاں کے باشندوں کی عادات کے مطالعہ کا موقع ملا۔ روابط میں "میں جموں کشمیر میں" پر کلِک کر کے پڑھئے میرے اور ریاست جموں کشمیر کے متعلق حقائق جو پہلے آپ کے علم میں شائد ہی آئے ہوں گے ۔ ۔ ۔ دلچسپیاں ۔ مطالعہ ۔ مضمون نویسی ۔ خدمتِ انسانیت ۔ ویب گردی ۔ ۔ ۔ پسندیدہ کُتب ۔ بانگ درا ۔ ضرب کلِیم ۔ بال جبریل ۔ گلستان سعدی ۔ تاریخی کُتب ۔ دینی کتب ۔ سائنسی ریسرچ کی تحریریں ۔ مُہمْات کا حال

7 thoughts on “خوشی صرف امیروں کی میراث ہے ؟ ؟ ؟

  1. urdudaaN

    آپ کے اِسم شریف میں لفظ بھوپال ھمیشہ میری توجّہ کھینچ لیتا ھے۔
    ھمارے یہاں ریاستِ “مدھیہ پردیش” جو دورِ فرنگ میں سی-پی یعنی سینٹرل پروونس کا حصّہ تھی، اسکا ایک قابلِ ذکر شہر ھے۔
    میں یوں ھی آپ کے نام میں اس کی شمولیت کے بارے میں جاننا چاہ رہا تھا۔

  2. اجمل

    اردودان صاحب
    آپ اپنا ای میل کا پتہ دے دیجئے تو آپ کو پوری کہانی بھیج دی جاۓ گی ۔
    کئی دن ہوۓ میں نے مدد مانگی تھی ۔
    بھوجن کا مطلب کھانے کی چیز ہوتا ہے تو بھوج کا کیا مطلب ہے ؟ کچھ مدد فرمائیے گا ؟

  3. urdudaaN

    urdudaan@yahoo.com
    شعیب صاحب نے کہا کہ وہ جواب دے چکے ھیں اور مجھے دینے کی ضرورت نہیں۔
    ہاں یہ میری غلطی تھی کہ میں نے تشفی بخش ھونے کی تصدیق نہیں کی۔ کل تک انشا اللّہ جواب حاضر کردوں گا۔

  4. اجمل

    اردودان صاحب
    ای میل آپ کو مل گئی ہو گی ۔ مزید معلومات کا انتظار رہے گا ۔ شعیب صاحب نے کہا تھا ۔ معلوم نہیں

  5. urdudaaN

    محترم اجمل صاحب، عمدہ دستاویز کیلئے شکریہ۔
    آپ کے سوال کا جواب جلد حاضر کرونگا کیونکہ مجھے سر ِ دست معلوم نہیں۔

  6. urdudaaN

    بُھوجَن یعنی کھانا/طعام اور بُھوج یعنی دعوتِ طعام
    انگریزی کے رِیسِیپشَن کیلئے ھندی میں “پِرِیتِی بُھوج” استعمال ھوتا ھے، جسمیں پریتی یعنی “پیار کی” اور بھوج یعنی “دعوت”۔ جسکے لئے اردو میں ولِیمَہ/دعوتِ ولیمہ زیرِ استعمال ھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

:wink: :twisted: :roll: :oops: :mrgreen: :lol: :idea: :evil: :cry: :arrow: :?: :-| :-x :-o :-P :-D :-? :) :( :!: 8-O 8)